تعلیمی و ثقافتی کمیٹی/ چہلم سے متعلقہ امور کا مرکزی دفتر

banner-img banner-img-en
logo

 ادب اور تحقیق


متن حدیث میں غور و خوض

پرنٹ
متن حدیث میں غور و خوض

 

شہزادی کے جملہ ’’ خیر ، بہتر ہے سے یہ استفادہ ہوتا ہے کہ حقیقت حال یہ ہے کہ رجحان اور فائدہ اس میں ہے دوسری بات یہ کہ شہزادی کا کلام یہ ایک نمونہ عمل کے سلسلے میں ہے جس کی رعایت ایک فضیلت رکھتا ہے اور جب تک ضرورت پیش نہ آئے تو اس پر عمل کرنا بہت بہتر ہے اس روایت کا اصل پیغام اور روح یہ ہے کہ جب تک کوئی شدید ضرورت پیش نہ آجائے نا محرموں کا سامنا کرنے سے پرہیز کریں خواتین کے لئے بہتر ہے کہ گھر میں رہیں اور خانوادگی مسائل کو حل کریں ، اگر ایک عورت کو اقتصاد کی ضرورت و مجبوری نہ ہو یا تعلیم و تعلم کے لئے مرد استاد یا مشترک کلاس سے پرہیز کریں ۔ اگر ایک خاتون ڈاکٹر ہیں تو مرد ڈاکٹر کے معالجہ سے گریز کریں ۔

ایک عورت کے لئے بہتر ہے کہ وہ گھر میں رہے اور گھر میں رہ کر امور خانہ تربیت اولاد اور شوہر داری کے فرائض کو حن و خوبی سے انجام دے اگر صاحب فن و ہنر ہیں گھر میں انجام دیں اگر تعلیم و تعلم کی ضرورت ہے تو اپنے ہم صنف ( خواتین ) کے ذریعہ اس کو حل کریں ۔

اگر ضرورت و مجبوری نہ ہوتو عورت کے لئے بہتر ہے کہ وہ نامحرم مرد کے سامنے جانے سے پرہیز کرے اور اس کا مطلب قانون کی ممنوعیت نہیں ہے اسلامی نقطہ نظر سے خواتین اسلامی اقدار و حجاب کی رعایت کرتے ہوئے اجتماعی امور میں حصہ لے سکتیں ہیں اور اس میں کوئی حرج نہیں ہے دوسرے لفظوں میں یوں کہا جائے کہ روایت میں جو حکم آیا ہے وہ ایک بہتر اور با فضیلت امر ہے نہ کہ ایک شرعی حکم ۔ 



حوالہ جات: باران کوثر
بھیجنے والا: ایڈمنسٹریٹر
 چہلم کے تعلیمی اور ثقافتی چینل میں سبسکرائب کریں

پرنٹ

ٹیگز متن حدیث۔ میں۔ غور و خوض

تبصرے


تبصرہ بھیجیں


Arbaeentitr

 حدیثیں

 دعا و زیارات